• صارفین کی تعداد :
  • 566
  • 9/21/2017
  • تاريخ :

امام کعبہ نے امریکی صدر ٹرمپ کو ’’امن کی فاختہ‘‘ قرار دے دیا!

 

امریکہ کے موجودہ صدر ایسی شخصیت ہیں کہ جن کی تعریف ان کے اپنے ملک میں یہودی اور عیسائی بھی نہیں کرتے لیکن اپنے آپ کو دنیائے اسلام کے رہبر و رہنما کہلوانے والے خادمین شریفین ٹرمپ کو "امن کی فاختہ" قرار دے بیٹھے ہیں۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔عربوں کی پیٹرو ڈالر سے چلنے والی ویب سائٹ مڈل ایسٹ آئی نے رپورٹ دی ہے کہ امام عبدالرحمن السدیس نے امریکہ کے دورے کے موقع پر یہ بیان جاری کیا کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ، امریکہ اور سعودی عرب دنیا کو امن کی جانب لے کر جارہے ہیں۔امام کعبہ نے امریکی صدر ٹرمپ کو ’’امن کی فاختہ‘‘ قرار دے دیا!

ڈیلی پاکستان نے امام کعبہ السدیس کے حوالے سے لکھا ہے کہ انہوں نے ٹی وی چینل الاخباریہ کو دئیے گئے انٹرویو میں سعودی عرب اور امریکہ کو دنیا میں اثر و رسوخ کے قطبین بھی قرار دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ "وہ دنیا اور انسانیت کو سلامتی، امن اور خوشحالی کی بندرگاہوں کی جانب لے جارہے ہیں۔ دونوں ممالک کو عالمی امن، سلامتی اور دہشتگردی کے خاتمے کیلئے اکٹھے ہونا چاہیے۔"

امام کعبہ ’اسلامی دنیا و امریکہ کے درمیان تہذیبی ابلاغ‘ کے موضوع پر منعقد ہونے والی کانفرنس میں شرکت کیلئے امریکہ گئے ہوئے ہیں۔

ان کے بیان پر سوشل میڈیا پر ایک ہنگامہ برپا ہے۔

سوشل میڈیا صارف ڈریڈ مسلم نے اس بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے سوال اٹھایا ”ٹرمپ اور امریکہ دنیا کو امن کی جانب لیجارہے ہیں، کہاں؟ افغانستان، یمن، عراق، صومالیہ یا شام میں؟ کیا آپ مجھے بتاسکتے ہیں؟“

اسی طرح المستلہا السیاسی نامی ٹویٹر صارف کا کہنا تھا ”اگر عبدالرحمن السدیس کے اس طرح کے نظریات نہ ہوتے تو شاید انہیں امام کعبہ مقرر ہی نہ کیا جاتا۔ شاید اسی لئے وہ ایسی باتیں کررہے ہیں۔“

ایک اور ٹویٹر صارف این سان کا کہنا تھا ”ہم عبدالرحمن السدیس کا احترام کرتے ہیں لیکن انہوں نے جو کہا ہے وہ فوری طور پر رد کئے جانے کے قابل ہے۔“

سلطان نامی ٹویٹر صارف نے دوسری جنگ عظیم کے دوران امریکا کی جانب سے جاپان پر گرائے گئے ایٹم بم کا حوالہ دیتے ہوئے پوچھا ”اچھا، تو ہیروشیما پر گرائے گئے ایٹم بم کے متعلق کیا خیال ہے؟“