• صارفین کی تعداد :
  • 5787
  • 10/9/2012
  • تاريخ :

ہمارا بکرا  

ہمارا بکرا

سب کي آنکھوں کا ہے تارا بکرا

کتنا پيارا ہے ہمارا بکرا

اہلِ دنيا نے دکھائي جو چھري

سمت عقبيٰ کو سدھارا بکرا

اس کي صحت کا بھلا راز ہے کيا

مثلِ گائے ہے تمھارا بکرا

ہم نے سمجھا ہے انا کا خوگر

’’ميں ميں‘‘ کر کے جو پکار بکرا

جيسے بے چارہ ہو فاقے سے نڈھال

اس طرح کھاتا ہے چارہ بکرا

تيري آواز ميں ہے سوز و گداز

دل کو کھينچے ترا نعرہ بکرا

آہ ظالم وہ قصائي بھائي

ہائے مظلوم بچارہ بکرا

چور اچکوں سے حفاظت کے لئے

باندھ کر رکھئے خدارا بکرا

تحرير: شاہين اقبال اثر

پيشکش: شعبہ تحرير و پبشکش تبيان


متعلقہ تحريريں:

حيدرآباد کا چڑيا گھر