• صارفین کی تعداد :
  • 4591
  • 8/25/2009
  • تاريخ :

كوّا اور كبوتر (حصّہ هفتم)

كوّا اور كبوتر

كبوتر بولا: " مجهے  يہ  جان كر خوش ہوئي كہ سچائي اور نيك نامي كا كتنا فائده ہے ليكن قاضي صاحب، ميں آپ كو يہ  بتانا ضروري سمجهتا ہوں كہ يہ  گهونسلا ميرا نہيں، كوّے كي ملكيت ہے اور مجهے اچها نہيں لگتا ہے كہ ميري شہرت تو راست گوئي كي ہو اور ميرا عمل اس كے خلاف ہو-"

ہدہد بولا: " آفرين، مجهے بهي خوشي ہوئي كہ تمهارے بارے ميں ميرا گمان درست تها- ليكن يہ  بتاؤ كہ فيصلے كے موقع پر تم نے جهوٹ كيوں بولا-"

كبوتر نے كہا: " ميں نے آپ كي خدمت ميں ايك لفظ بهي جهوٹ نہيں بولا- ہماري جو گفتگو ہوئي تهي اس كي صورت يہ تهي : ميں نے يہ  نہيں كہا تها كہ گهونسلا ميں نے بنايا ہے يا خريدا ہے- ميں نے كہا تها كہ ميں وهاں بيٹها ہوا تها اور ميں صحيح كہہ رها تها- ليكن آپ كے آنے سے پہلے كوّے نے ہنگامے اور فضول داد و فرياد سے مجهے مجبور كر ديا كہ ميں بهي اس كے لہجے ميں اس سے بات كروں- ميں اپنے بچے كو پرواز سكه رها تها- بچے نڈال ہوگيا تها- بے چاره ايك لمحے كو يہاں بيٹها اور كوّا آيا اور اعتراض شروع كرديا- ميں نے اس سے معذرت كي اور يےاں سے جان چاہا ليكن اس نے ہميں جانے نےنہ ديا، ہنگامہ كهڈا كر ديا اور لڈنے مارنے پر تيار ہوگيا- ميں چاہتا تها كہ اسے تنبيہ ہوجائے- ليكن اب گفتگو چوں كہ ميري راستي اور نيك نامي كي ہو رہي ہے تو ميں اس نيك نامي كو سينكڑوں گهونسلوں كے عوض بهي هاته سے نہ جانے دوں گا-"

                                                                                                                                                              جاری ہے

کتاب کا نام   بے زبانوں کی زبانی  
مولف  مهدی آذریزدی  
مترجم  ڈاکٹر تحسین فراقی  
پیشکش  شعبۂ تحریر و پیشکش تبیان

 


متعلقہ تحریریں :

حلال اور حرام کمائی کے اثرات

اخلاقی محبت