• صارفین کی تعداد :
  • 7090
  • 12/16/2007
  • تاريخ :

شوگر مرض کا نيا طريقہ علاج

                    

ذيابيطس

آسٹريلوي طبي ماہرين نے ذيابيطس کے مريضوں کو جراحي سے بچانے کا نيا طريقہ علاج دريافت کرليا ہے۔

 

 آسٹريلوي رائل نارتھ شور ہسپتال کے ماہر سرجن اور محقق ڈاکٹر رودي لين نے ميڈيا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ذيابيطس کے مريضوں کي ٹانگ اور خاص طور پر پائوں ميں ہونے والي کنيگرين انفيکشن کے باعث بعض اوقات مريض کي ٹانک دو پيريفرل واسکولر بيماري روکنے کے لئے کاٹني پڑتي ہے ليکن نئے طريقہ علاج سے مريض کي ٹانگ نہيں کاٹنا پڑے گي۔

 

 اس ضمن ميں مالکولم برائون نامي باون سالہ مريض پر باقاعدہ تجربہ کيا گيا جو انتہائي کامياب رہا۔ سرجن روڈي لين نے مالکولم کي ران ميں بڑي ہڈي فيمر کي وريدوں کے ذريعے ٹانگ کے نچلے حصے کو خون کي فراہمي شروع کي جو کہ کامياب رہي جس پر مريض کا خون ہائي بلڈ پريشر کے ذريعے پائوں ميں داخل کيا گيا جس سے پائوں اور ٹانگ کے متاثرہ حصے کو خون کي فراہمي شروع ہوگئي اس طرح مريض کي ٹانگ کي سرجري نہيں کرنا پڑي واضح رہے کہ مغربي ممالک ميں ہر سال ذيابيطس کے تين لاکھ چاليس ہزار مريضوں کي ٹانگيں يا پائوں کاٹنا پڑتے ہيں۔