• صارفین کی تعداد :
  • 474
  • 1/2/2018 4:07:00 PM
  • تاريخ :

دوپہر کے کھانے کے بعد نیند کیوں آتی ہے؟

دوپہر کا کھانا کھانے کے بعد ہی آپ سستی محسوس کرنے کے ساتھ نیند میں جھولنا شروع ہوجائیں تو کیا ہوگا؟

 
دوپہر کے کھانے کے بعد نیند کیوں آتی ہے؟


سوچیں آپ اس وقت اپنے دفتر میں موجود ہیں اور دن میں 3 سے 4 بجے آپ کو کوئی نہایت اہم کام کرنا ہے، لیکن دو بجے دوپہر کا کھانا کھانے کے بعد ہی آپ سستی محسوس کرنے کے ساتھ نیند میں جھولنا شروع ہوجائیں تو کیا ہوگا؟

ایسا صرف آپ کے ساتھ ہی نہیں تقریباً سب کے ساتھ ہوتا ہے کہ دوپہر کا کھانا کھانے کے بعد نیند آجاتی ہے، لیکن کیا اس کی کوئی خاص وجہ ہے؟

یہ بہت عام ہے کہ دن میں پیٹ بھر کھانا کھانے کے بعد یا ایسا کھانا جس میں کاربوہائیڈریٹ کی مقدار زیادہ ہو تو نیند آتی ہے، جسے لوگ قیلولہ لینا کہتے ہیں۔

دوپہر کا کھانا کھانے کے بعد نیند آنے کی اصل وجہ یہ ہے کہ ہمارے جسم میں انسولین کی سطح کافی بڑھ جاتی ہے، کھانا جتنا بھاری ہوگا جسم میں انسولین اتنی بڑھے گی، اس دوران جسم میں سلیپ ہارمون جسے نیند پیدا کرنے کا ہارمون بھی کہا جاتا ہے وہ جنم لیتا ہے، جو دماغ میں تھکاوٹ کا خیال پیدا کرتا ہے، جسے سستی پیدا ہوتی، اور سارا فوکس کھانے کو ہضم کرنے میں رہتا ہے۔

کھانا کھانےکے بعد سب سے اہم فنکشن اس کو ہضم کرنا ہے جس کے لیے اینرجی کی ضرورت پڑتی ہے، اس لیے دن کا کھانا کھانے کے بعد جسم میں سستی محسوس ہوتی۔

یہ بات کھانے پر بھی منحصر کرتی ہے، اگر کھانا فیٹ سے بھرپور ہے تو اسے ہضم ہونے میں وقت لگے گا۔

ایسا ہی کچھ رات کے کھانے کے بعد بھی ہوتا ہے، لیکن اس وقت ہمیں اس بات کا زیادہ اندازہ اس لیے نہیں ہوتا کیوں کہ رات کے وقت ہمارا ذہن جانتا ہے کہ نیند لینی ہے، لیکن دن میں سونے کا کوئی ارادہ نہیں ہوتا اس لیے نیند زیادہ محسوس ہوتی ہے۔

دن کے کھانے کے بعد نیند سے بچنے کے لیے کیا کریں؟

کچھ خاص نہیں، کیوں کہ یہ حالت بالکل نارمل ہے، البتہ اپنی ڈائیٹ کا خیال کرتے ہوئے کھانے کی مقدار میں کمی لائی جاسکتی ہے، آپ جتنا زیادہ کھائیں گے، اس کو ہضم ہونے میں اتنی اینرجی درکار ہوگی، اور آپ اتنی ہی نیند محسوس کریں گے۔

ایسی غذا کھائیں جو آسانی سے ہضم ہوجائے، تاکہ آپ دن میں تازہ رہیں۔

منبع: ڈان نیوز