• صارفین کی تعداد :
  • 2899
  • 9/20/2013
  • تاريخ :

مغربي معاشرہ ميں عورت کے متعلق مبالغہ آرائي

مغربی معاشرہ میں عورت کے متعلق مبالغہ آرائی

عورت اور ترقي

امريکہ اور يورپ نے گذشتہ دو صديوں کے درميان جو محيرالعقول سائنسي ترقي کي ہے، اس ميں عورتوں کے حصے کو اَصل تناسب سے کہيں بڑھا چڑھا کر پيش کيا جاتا رہا ہے- محدود دائروں ميں عورتوں کے کردار اور حصہ سے انکار ممکن نہيں ہے- البتہ مغربي معاشرے کي اجتماعي ترقي کا معروضي جائزہ ليا جائے تو تحريک آزادي نسواں کے علمبرداروں کے دعوے مبالغہ انگيز نظر آتے ہيں- مغرب کي مادّي اور سائنسي ترقي کے پس پشت کار فرما ديگر عوامل مثلاً جارحانہ مسابقت، مادّي ذرائع پر قبضہ کي ہوس، طبيعاتي قوانين کو جاننے کا جنون، مغربي استعمار کو نو آباديات پر مسلط رکھنے کا عزم، ايشيا اور افريقہ کي منڈيوں پر قبضے کي جدوجہد، مغرب کي نشاة ثانيہ کے بعد مغربي معاشرے ميں علوم و فنون ميں آگے بڑھنے کا جذبہ، سرمايہ دارانہ نظام ميں کام کي بنياد پر ترقي کي ضمانت، مندي کي معيشت و غيرہ جيسے عوامل نے جو کردار ادا کيا ہے ، اس کا نئے سرے سے جائزہ لينے کي ضرورت ہے-

قومي ترقي کے لئے کيا عورتوں کا ہر ميدان ميں مردوں کے شانہ بشانہ کام کرنا ناگزير ہے؟ اس اہم سوال کا جواب ہاں' ميں دينا بے حد مشکل ہے- اگر عورت اپنے مخصوص خانداني فرائض کو نظر انداز کرکے زندگي کے ہر ميدان ميں شرکت کرے گي تو خانداني ادارہ عدم استحکام کا شکار ہوجائے گا اور خانداني ادارے کے عدم استحکام ميں آنے کے منفي اَثرات زندگي کے ديگر شعبہ جات پر بھي پڑيں گے- مغرب ميں يہ نتائج رونما ہوچکے ہيں!!

اکيسويں صدي ميں انساني تہذيب کو جن فتنوں کا سامنا کرنا پڑے گا، ان ميں تحريک آزادي نسواں (Feminism) کا فتنہ اپنے وسيع اثرات اور تباہ کاريوں کي بنا پر سب سے بڑا فتنہ ہے- مغرب ميں عورتوں کو زندگي کے مختلف شعبہ جات ميں جس تناسب اور شرح سے شريک کر ليا گيا ہے، اگر يہ سلسلہ يونہي جاري رہا تو دنيا ترقي کي موجودہ رفتار کو ہرگز برقرار نہيں رکھ سکے گي بلکہ اگلے پچاس سالوں ميں انساني دنيا زوال اور انتشار ميں مبتلا ہو جائے گي- جو لوگ عورت اور ترقي کو باہم لازم وملزوم سمجھتے ہيں، انہيں يہ پيش گوئي مجذوب کي بڑ، رجعت پسندي اور غير حقيقت پسندانہ بات معلوم ہو گي، ليکن اکيسويں صدي کے آغاز پر انسانيت جس سمت ميں رواں دواں ہے، بالآخر اس کي منزل يہي ہو گي- ( جاري ہے )

 

متعلقہ تحریریں:

مرد اور عورت کے درميان بنيادي فرق کيا ہے؟

مرد اور عورت کا مشترکہ زندگي