• صارفین کی تعداد :
  • 4254
  • 7/31/2013
  • تاريخ :

قرآن جيسا کلام لانا ناممکن ہے

قرآن الکريم

انبياء کرام اور معجزے (حصّہ اوّل) 

انبياء کرام اور معجزے (حصّہ دوّم)

انبياء کرام اور معجزے (حصّہ سوّم)

قرآن مجيد ميں اللہ تعاليٰ نے اہل کتاب اورمشرکين کو قرآن کا مثل لانے کا چيلنج ديا تھا،پھر يہ چيلنج دس سورتوںتک محدود کر ديا گيا ،حتٰي کہ صرف ايک ہي سورت کا مثل لانے کا چيلنج دے ديا گيا مگرنزول قرآن کے آغاز سے لے کر چودہ صدياں گزر گئي ہيں مگر کوئي شخص قرآن مجيد کي سي ايک صورت بھي تخليق نہيں کرسکا جس ميں کلام الٰہي کا سا حسن ،بلاغت ،شان،حکيمانہ قوانين ،صحيح معلومات ،سچي پيشگوئياں اور ديگر کامل خصوصيات ہوں-

يہ امر قابل ذکر ہے کہ قرآن کريم کي چھوٹي سے چھوٹي سورت ''الکوثر'ہے جس ميں فقط دس الفاظ ہيں مگر کوئي اس وقت اس چيلنج کاجواب دے سکا نہ بعد ميں-

بعض کفار عرب جو نبي صلي اللہ عليہ وسلم کے دشمن تھے ،انہوں نے اس چيلنج کا جواب دينے کي کوشش کي تاکہ يہ ثابت کرسکيں کہ محمد صلي اللہ عليہ وسلم جھوٹے ہيں(نعوذباللہ)مگر وہ ايسا کرنے ميںناکام رہے-ان ميں ايک مسيلمہ کذاب بھي تھا جس نے محمد صلي اللہ عليہ وآلہ وسلم کي حيات مبارکہ کے آخري دنوںميں نبوت کا جھوٹا دعويٰ کيا -اس نے قرآن مجيد کي بعض سورتوں کي نقل کرنے کي بھونڈي کوشش کي ،مثلاً:

(( اَلْفِيْلُ، وَمَا الْفِيْلُ ،وَمَا اءَدْرٰکَ مَاالْفَيْلُ،لَہُ ذَنَب دَبِيلوَّ خُرْطُوْم طَوِيْل))

'' ہاتھي ہے،اور ہاتھي کيا ہے،اور تم کيا سمجھے کہ ہاتھي کيا ہے-اس کي ايک موٹي دم ہے اورلمبي سونڈ ہے''-

مسيلمہ نے ترنم کي خوش آہنگي ميں لاجواب اور حکمت ومعاني سے بھرپور سورة العاديات کي طرز ميں بھي فضول طبع آزمائي کي اور ''مينڈکي ''پر چند بے معني فافيہ دار جملے بھي گھڑے مگر ''چہ نسبت خاک راباعالم پاک !'' وہ سراسر احمقانہ کلام تھا جو اس نام نہاد پيغمبر پر شيطان نے نازل کيا تھا - مسيلمہ کذاب بعد ميں  اپنے جھوٹے کلام اور باطل اعمال کے ساتھ مسلمانوں کے ہاتھوں قتل ہو کر جہنم کا ايندھن بن گيا -

عبداللہ بن مقفّع عربي کا ايک بڑا فصيح وبليغ اديب تھا -اس نے جب قرآن کا چيلنج پڑھا تو اس کے ہم پلہ کوئي ادبي کاوش پيش کرنے کي سوچي -اس نے بہت مغز ماري کي ليکن جب سرراہ ايک بچے کے منہ سے يہ آيت سني :

(وَقِيْل يٰاَرْضُ ابْلَعِيْ مَآءَ کِ وَيٰسَمَآءُ اَقْلِعِيْ)

'' اور کہا گيا : اے زمين !اپنا پاني نگل جا اور اے آسمان !تھم جا''

تو وہ پکار اٹھا :

''ميں گواہي ديتا ہوں کہ يہ کلام الٰہي ہے اوراس کي نظير پيش کرنا ممکن ہي نہيں '' ( جاري ہے )

 

بشکريہ صراط الہدي ڈاٹ کام


متعلقہ تحریریں:

آيات کي تقسيم كے قاعدے

قرآنِ کريم: جاوداں الٰہي معجزہ