• صارفین کی تعداد :
  • 3428
  • 2/8/2012
  • تاريخ :

لکھنئو

لکھنئو

خدا     آباد    رکھے     لکھنئو    کو

يہ بستي خوب صورت ہے حسيں  ہے

ہے  بڑھ کر خلد  سے  ہر   باغ  اس  کا

ہے پھولو ں کي مہک ساري فضا ميں

رواں   ہے  گومتي   دل کش  ادا  سے

ہے اس کي شام کي شہرت جہاں ميں

نہايت  خوش نما  ہے  ساري   بستي

بہت   سي  ہيں   پراني   يادگاريں

ہمارے   ملک  کي  اردو   زباں   ہے

بہت  شستہ  زباں  ہے  لکھنئو  کي!

ہميشہ   شاد   رکھے   لکھنئو   کو

کہيں اس  شہر  کا  ثاني  نہيں  ہے

امين  آباد  و  قيصر  باغ   اس    کا

بہاريں  کھيلتي  ہيں اس  ہوا  ميں

بہلتي   ہے  طبيعت  اس  فضا  سے

نظير اس کي کہا ں ہند و ستاں ميں

اَوَدھ  کي جان  ہے  يہ  پياري  بستي

پراني     پر   سہاني     ياد   گاريں

زباں اس  شہر کي  سي پر  کہاں  ہے؟

جو  ہے  اردو   وہ  جاں  ہے لکھنئو کي!

شاعر کا نام : اختر شيراني

پيشکش: شعبہ تحرير و پبشکش تبيان


متعلقہ تحريريں:

ارادے