• صارفین کی تعداد :
  • 3157
  • 11/3/2011
  • تاريخ :

ہماري زبان

بچّہ 

يارب  رہے سلامت اردو  زباں  ہماري!

مصري سي تولتا ہے- شکر سي گھولتا ہے

ہندو ہو پارسي ہو عيسائي ہو کہ مسلم

دنيا کي بوليوں سے مطلب نہيں ہميں کچھ

دنياکي کل زبانيں بوڑھي سي ہو چکي ہيں

اپني زبان  سے  ہے عزت جہاں ميں  اپني

اردو کي گود ميں ہم پل کر بڑے ہوئے ہيں

آزاد و مير وغالب  آئيں گے ياد برسوں

افريقہ ہو عرب ہو امريکہ ہو کہ يورپ

مٹ جائيں گے مگرہم مٹنے نہ ديں گے اس کو

ہر لفظ پر ہے جس کے قربان جاں ہماري!

جو کوئي بولتا ہے ميٹھي زباں ہماري!

ہر ايک کي زباں ہے اردو زباں ہماري!

اردو ہے دل ہمارا اردو ہے جاں ہماري!

ليکن ابھي جواں ہے اردو زباں ہماري !

گر ہو زباں نہ اپني عزت کہاں ہماري!

سو جاں سے ہم کو پياري اردو زباں ہماري!

کرتي  ہے  ناز جن پر  اردو  زباں ہماري!

پہنچي کہاں نہيں  ہے اردو زباں ہماري!

ہے جا ن و دل سے پياري ہم کو زباں ہماري!

شاعر کا نام: اختر شيراني

پيشکش : شعبۂ تحرير و پيشکش تبيان


متعلقہ تحريريں:

خدا کي تعريف

بڑي بات ہے

کارنامہ

بہار آئي

چوہوں کا اجلاس

اپنا قائد