• صارفین کی تعداد :
  • 1254
  • 3/23/2012
  • تاريخ :

عوالم کے درجاتِ رشد ولايت اميرالمۆمنين کے تابع5

امام علی(ع)

عوالم کے درجاتِ رشد ولايت اميرالمۆمنين کے تابع1

عوالم کے درجاتِ رشد ولايت اميرالمۆمنين کے تابع2

عوالم کے درجاتِ رشد ولايت اميرالمۆمنين کے تابع3

عوالم کے درجاتِ رشد ولايت اميرالمۆمنين کے تابع4

سيد محمد مهدي ميرباقري

اميرالمۆمنين عليہ السلام فرماتے ہيں: پس ابليس کے ساتھ خدا کے معاملے سے عبرت حاصل کرو کہ خداوند متعال نے اس کے تمام نيک اعمال باطل کرديئے اور اس کي اتني سعي و کوشش کو بے ثمر کرديا- ابليس نے چھ ہزار سال عبادت کي اب يہ کسي کو نہيں معلوم کہ وہ چھ ہزار سال دنيا کے سال تھے يا آخرت کے سال- ابليس کے بعد اب کون ہے حو ذات احديت کے مقابلے ميں اس طرح کي نافرمانيوں سے بچ کر رہ سکے؟-

يہ سب اس لئے تھا کہ اس نے آدم عليہ السلام کے وجود ميں رسول اللہ صلي اللہ عليہ و آلہ و سلم کي تعظيم کرنے سے انکار کيا- 

يہ وہي چيز ہے جس کي خلاف ورزي درگاہ خداوندي ميں قابل عفو نہيں ہے اور يہي وہي امر ہے جس کي وجہ سے خداوند متعال نے ابليس کو چھ ہزار سال تک عبادت کے باوجود اپني درگاہ سے نکال باہر کيا-

ابليس نے قسم اٹھائي تھي کہ وہ انسانوں کو "صراط مستقيم" سے روکے رکھے گا اور صراط مستقيم سے اميرالمۆمنين (ع) مراد ہے- (8) شيطان يہاں للکار للکار کر بول پڑتا ہے کيونکہ اگر يہ راستہ بند ہوجائے دوسرا کوئي راستہ باقي نہ رہے گا- آپ نے وہ روايت ديکھي ہوگي کہ جو شخص غلط اور گمراہي کے راستے پر نکلتا ہے وہ جتنا تيز رفتاري سے سے چلے گا زيادہ دور ہوجائے گا-

نيز اس آيت شريفہ کے ذيل ميں متعدد روايات وارد ہوئي ہيں جو شيخ صدوق کي کتاب "التوحيد" اور ديگر کتب ميں منقول ہيں: " اللَّهُ نُورُ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ مَثَلُ نُورِهِ كَمِشْكَاةٍ فِيهَا مِصْبَاحٌ الْمِصْبَاحُ فِي زُجَاجَةٍ الزُّجَاجَةُ كَأَنَّهَا كَوْكَبٌ دُرِّيٌّ يُوقَدُ مِن شَجَرَةٍ مُّبَارَكَةٍ زَيْتُونِةٍ لَّا شَرْقِيَّةٍ وَلَا غَرْبِيَّةٍ-  يَكَادُ زَيْتُهَا يُضِيءُ وَلَوْ لَمْ تَمْسَسْهُ نَارٌ نُّورٌ عَلَى نُورٍ يَهْدِي اللَّهُ لِنُورِهِ مَن يَشَاء وَيَضْرِبُ اللَّهُ الْأَمْثَالَ لِلنَّاسِ وَاللَّهُ بِكُلِّ شَيْءٍ عَلِيمٌ "- (9)-

------

مآخذ

8- شواہد التنزيل الحسکاني ج1 ص79-

9- سورہ نور آيت 35-

تفسير قمي - علي بن ابراهيم القمي ـ جلد1 ـ ص92-