• صارفین کی تعداد :
  • 4605
  • 5/22/2012
  • تاريخ :

ہماري بندريا

بندریا

ہميں جان و دل سے ہے پياري بندريا

 مٹھائي کي پھل کي پجاري   بندريا

 کوئي غير چھيڑے تو دھتکارتي ہے

ہميں پيار  کرتي  ہے   پچکارتي  ہے

ہو مکھي کہ مچھر  ذرا  پاس  آئيں

ہماري  بندريا کا  تھپڑ  تو کھائيں

کبھي اس کي زنجير ہے ٹوٹ جاتي

کوئي شے سلامت نہيں رہنے پاتي

کوئي ہم کو چھيڑے تو غراتي ہے يہ

کئے  سرخ  منہ  اپنا   چلّاتي   ہے  يہ

قميص ايک ننھي سي بنوائيں گے ہم

اور اپني بندريا  کو  پہنائيں  گے  ہم

ہے کيا ننھي ننھي  دلاري   بندريا

ہماري   بندريا  ہماري    بندريا

خفا  ہوتي  ہے  اور  للکارتي   ہے

کہ ان کي نہيں‘ہے ہماري بندريا

اسے چھيڑنے کا مزہ  آ  کے  پائيں

کہ اب ہو گئي ہے شکاري بندريا

تو گھر بھر ميں پھر تي ہے اودھم مچاتي

اٹھاتي  ہے  آفت  ہماري   بندريا

لپک  کر  اسے  کاٹنے  آتي  ہے  يہ

محبت  کے  مارے   بچاري   بندريا

اک اچھي سي شلوار سلوائيں گے ہم

کہ ہے پياري  پياري  ہماري  بندريا

شاعر کا نام : اختر شيراني

پيشکش: شعبہ تحرير و پبشکش تبيان


متعلقہ تحريريں:

يہ ساري خدائي ہمارے لئے ہے