• صارفین کی تعداد :
  • 11118
  • 2/3/2010
  • تاريخ :

مکتوب نمبر 12

امیرالمؤمنین علیہ السلام

 جب معقل ابن قیس ریاحی کو تین ہزار کے ہرا دل دستہ کے ساتھ شام روانہ کیا. تو یہ ہدایت فرمائی .

 ا س اللہ سے ڈرتے رہنا جس کے روبرو پیش ہونا لازمی ہے اور جس کے علاوہ تمہارے لیے کوئی اور آخر ی منزل نہیں جو تم سے جنگ کرے اس کے سوا  کسی سے جنگ نہ کرنا اور صبح و شام کے ٹھنڈے وقت سفر کرنا اور دوپہر کے وقت لوگوں کو سستانے اور آرام کر نے کا موقع دینا, آہستہ چلنا اور شرو ع رات میں سفر نہ کرنا کیونکہ اللہ نے را ت سکون کے لیے بنائی ہے اور اسے قیام کرنے کے لیے رکھا ہے. نہ سفر و راہ پیمائی کے لیے. اس میں اپنے بدن اور اپنی سواری کو آرام پہنچاؤ, اور جب جان لو کہ سپیدہ سحر پھیلنے اور پوپھوٹنے لگی ہے تو اللہ کی برکت پر چل کھڑے ہونا جب دشمن کا سامنا ہو تو اپنے ساتھیوں کے درمیان ٹھہرو, اور دیکھو! دشمن کے اتنے قریب نہ پہنچ جاؤ کہ جیسے کوئی جنگ چھیڑ نا ہی چاہتا ہے اور نہ اتنے دور ہٹ کر رہو جیسے کوئی لڑائی سے خوفزدہ ہو اس وقت تک کہ جب تک میرا حکم تم تک پہنچے اور دیکھو ایسا نہ ہو کہ ان کی عداو ت تمہیں اس پر آمادہ کر دے کہ تم حق کی دعوت دینے اور ان پر حجت تمام کرنے سے پہلے ان سے جنگ کرنے لگو.


متعلقہ تحریریں:

مکتوب نمبر1

مکتوب نمبر2

مکتوب نمبر3

مکتوب نمبر4

مکتوب نمبر5

مکتوب نمبر6

مکتوب نمبر7

مکتوب نمبر 8