• صارفین کی تعداد :
  • 627
  • 12/21/2013
  • تاريخ :

بارک اوباما، ايرانيوں کا اعتماد بحال کئے جانے کي ضرورت

ایرانیوں کا اعتماد بحال کئے جانے کی ضرورت

امريکي صدر بارک اوباما نے کہا ہے کہ جوہري مذاکرات جاري رکھنے کيلئے ايرانيوں کا اعتماد بحال کئے جانے کي ضرورت ہے- امريکي صدر نے نامہ نگاروں سے گفتگو ميں کہا کہ حاليہ جوہري مذاکرات ميں گذشتہ دس سالوں کي برابر پيشرفت ہوئي ہے اور اس کاميابي کو غير منطقي پابنديوں سے متاثر نہيں کيا جانا چاہيئے- بارک اوباما نے کہا کہ مذاکرات کي ناکامي کي صورت ميں ان تمام امور پر غور کيا جا سکتا ہے جو امريکہ کے پيش نظر ہيں مگر امريکي کانگريس کو ايسي حالت ميں کہ مذاکرات کا عمل جاري ہے، پابنديوں کے نفاذ کے ذريعے ايرانيوں کي نظر ميں عدم اعتماد کا باعث نہيں بننا چاہيئے-

بارک اوباما نے ايران کے خلاف نئي پابنديوں سے متعلق امريکي کانگريس کے بعض نمائندوں کے موقف کو ان نمائندوں کي تشہيرات کا عامل قرار ديا اور انھيں موجودہ صورت حال ميں اس قسم کے اقدامات پر خبردار کيا-قابل ذکر ہے کہ امريکي سينيٹروں نے ايک ايسا بل پيش کيا ہے جس ميں ايران کي جانب سے معاہدے کي خلاف ورزي کي صورت ميں تہران کے خلاف نئے تاديبي اقدامات کي بات کہي گئي ہے-

البتہ امريکي صدر بارک اوباما نے کہا ہے کہ جبتک ايران کے جوہري مسئلے ميں مذاکرات کا عمل جاري ہے نئي پابنديوں کے نفاذ کي کوئي ضرورت محسوس نہيں کي جاتي-

 

بشکریہ اردو ریڈیو تھران

 


متعلقہ تحریریں:

خطيب جمعہ تہران : امريکہ ملت ايران کا سب سے بڑا دشمن

ايران کے ساتھ ايٹمي سفارتکاري