• صارفین کی تعداد :
  • 3813
  • 9/13/2008
  • تاريخ :

9  رمضان  کے اہم واقعات

تسبیح

9 رمضان المبارک سنہ 297 ہجری قمری کو تیسری صدی ہجری کے ایک شاعر، ادیب ، محدث اور فقیہ " محمد بن داؤد ظاہری " کا 42 سال کی عمر میں انتقال ہوا ۔ داؤد ظاہری شعر ، ادب ، حدیث اور فقہ میں استاد کی حیثیت رکھتے تھے ۔انہوں نے ادب کے موضوع پر  متعدد کتابیں تحریر کیں۔

9 رمضان المبارک سنہ 853 ہجری قمری کو ممتاز ماہر فلکیات الغ بیگ کو قتل کردیا گيا ۔وہ سولہ سال کی عمر میں تیمور کے جانشین مقرر ہوئے ۔تیمور کے برخلاف الغ بیگ کو ملک کی سرحدوں میں توسیع میں کوئی دلچسپی نہیں تھی بلکہ زيادہ تر تحقیق و مطالعہ میں مشغول رہتے تھے ۔انہوں نے ایک مدرسہ قائم کیا جس میں دیگر موضوعات کے علاوہ علم نجوم خاص طور پر پڑھایا جاتا تھا ۔الغ بیگ کی دیگر کاوشوں میں سنہ 828 ہجری قمری میں سمرقند میں قائم کی گئی ایک تین منزلہ رصد گاہ ہے ۔قابل ذکر ہے کہ شمسی نظام کے کچھ سیاروں کے بارے میں الغ بیگ کی تحقیقات کے نتائج آج کی تحقیقات سے زيادہ مختلف نہیں ہیں ۔

 

9 رمضان سنہ 1325 ہجری قمری کو آیت اللہ شیخ محمد بہاری ہمدانی کاانتقال ہوا ۔وہ 13 ویں اور 14 ویں صدی ہجری قمری کے ایران کے مشہور عارف اور بزرگ عالم دین ہیں جو اپنی پرہیزگاری نیکی عمل اور علمی کمالات کی وجہ سے مشہور ہیں ۔انہوں نے اپنی ابتدائي تعلیم مکمل کرکے عراق کے شہر نجف میں واقع اعلیٰ دینی درسگاہ میں داخلہ لیا اور تعلیم کی تکمیل کے بعد تدریس میں مشغول ہوگئے ۔آیت اللہ بہاری ہمدانی کی تصنیفات کا مجموعہ "تذکرۃ المتقین " کے نام سے شائع ہوا ہے ۔