• صارفین کی تعداد :
  • 5398
  • 8/5/2008
  • تاريخ :

اقوال حضرت امام حسن علیہ السلام

امام حسن مجتبی -ع-

حدیث-۱-

قال الامام الحسن علیہ السلام:

” عجبت لمن یتفکر فی ماکولہ کیف لا یتفکر فی معقولہ فیجنب بطنہ ،

 ما یوء ذیہ و یودع صدرہ ما یردیہ“

ترجمہ:

حضرت امام حسن علیہ السلام فرماتے ھیں :

” مجھے تعجب ھے اس شخص پر کہ جو جسمانی غذا کے متعلق توغور و فکر کرتا ھے لیکن روحانی غذا کے لئے نھیں ۔ نقصان دہ غذاؤں کو اپنے شکم سے دور رکھتا ھے لیکن ھلاک کرنے والے مطالب کو اپنے قلب میں جگہ دیتا ھے “۔

 

حدیث -۲-

قال الامام الحسن علیہ السلام :

”القریب من قربتہ المودة و ان بعد نسبہ و البعید من باعدتہ المودة و ان قرب نسبہ “

ترجمہ:

 حضرت امام حسن علیہ السلام فرماتے ھیں :

” رشتہ داروں میں قریب ترین افراد وہ ھیں جن کے اندر محبت زیادہ ھے اگر چہ نسب کے لحاظ سے دور ھوں ۔ اور رشتہ داروں میں دورترین افراد وہ ھیں جن کے اندر محبت کم ھے اگر چہ وہ نسب کے لحاظ سے قریب ھوں “۔

 

حدیث -۳-

قال الامام الحسن علیہ السلام

” ما تشاور قوم الا ھدوا الی رشدھم “

ترجمہ:

 حضرت امام حسن علیہ السلام فرماتے ھیں :

 ” کوئی بھی گروہ اپنے امور میں ایک دوسرے سے مشورہ نھیں کرتا مگر یہ کہ اس میں انکے لئے خیر و صلاح ھو “۔

 

حدیث -4-

قال الامام الحسن علیہ السلام:

” اللوٴم ان لا تشکر النعمة “

ترجمہ ۔

 حضرت امام حسن علیہ السلام فرماتے ھیں :

 ” انسان کی پستی و ذلت یہ ھے کہ نعمت کا شکر ادا نہ کرے “ ۔

 حدیث -5-

قال الامام الحسن علیہ السلام:

” العار اھون من النار “

ترجمہ:

 حضرت امام حسن علیہ السلام فرماتے ھیں :

” ذلت دوزخ کی آگ سے بھتر ھے “۔

 

حدیث -۶-

قال الامام الحسن علیہ السلام:

” الخیر الذی لا شر فیہ : الشکر مع النعمة و الصبر علی النازلة “

ترجمہ:

 حضرت امام حسن علیہ السلام فرماتے ھیں :

 ” ایک خیر ایسا ھے جس میں کسی طرح کا کوئی شر نھیں ھے : وہ یہ ھے کہ نعمت ملنے پر شکر ،اور مصیبت کے وقت صبر کیا جائے“۔

 

حدیث -۷-

قال الامام الحسن علیہ السلام:

”اذا لقی احدکم اخاہ فلیقبل موضع النور من جبھتہ “

ترجمہ:

 حضرت امام حسن علیہ السلام فرماتے ھیں :

” جب تم میں سے کوئی اپنے دینی بھائی سے ملاقات کرے تو اسکی نورانی پیشانی کا بوسہ لے

Ishragh.net