• صارفین کی تعداد :
  • 9438
  • 1/24/2014
  • تاريخ :

تاريخ اسلام کي ايک عظيم المرتبت خاتون " حميدہ بنت صاعد "

 تاریخ اسلام کی ایک عظیم المرتبت خاتون  حمیدہ بنت صاعد

فرزند رسول حضرت امام جعفرصادق عليہ السلام کي شريک حيات اور حضرت امام موسي کاظم  عليہ السلام  کي  والدہ  ماجدہ  حميدہ بنت صاعد تاريخ اسلام کي ايک عظيم المرتبت ، نامور اور بافضيلت خاتون ہيں-

 فرزند رسول حضرت امام محمد باقر عليہ السلام جناب حميدہ کے بارے ميں فرماتے ہيں: " وہ دنيا ميں حميدہ يعني پسنديدہ اور آخرت ميں محمودہ يعني نيک صفات کي حامل خاتون ہيں"-جناب حميدہ جو فرزند رسول حضرت امام محمد باقر عليہ السلام کي کنيز تھيں، انہيں آپ نے  اپنے فرزند امام جعفر صادق عليہ السلام کو بخش ديا تھا -

 فرزند رسول حضرت امام جعفرصادق عليہ السلام نے حميدہ سے نکاح کيا اوران کو اعلي مرتبے پر فائز کيا، جناب حميدہ سے چار اولاديں يعني حضرت امام موسي کاظم عليہ السلام، اسحاق، فاطمۂکبري اور محمد پيدا ہوئے - خاندان علوي ميں حميدہ کو اعلي مقام حاصل تھا اور ہر شخص ان کا احترام کرتا تھا خانوادۂ عصمت و طہارت ميں زندگي بسر کرنے کي وجہ سے روز بروز ان کے علم و فضل ميں اضافہ ہوتا گيا، چنانچہ آپ فرزندرسول حضرت امام جعفر صادق عليہ السلام کے حکم سے مدينے کي خواتين کو احکام و معارف اسلامي کي تعليم ديتي تھيں، مۆرخين کے مطابق جناب حميدہ عفت و حيا اور فضائل و کمالات کے لحاظ سے اپنے زمانے کي خواتين کے درميان فقيد المثال خاتون تھيں اور شائستگي، انتظامي امور کي صلاحيت اور امانت و صداقت جيسے اعلي صفات سے متصف تھيں، حضرت امام جعفر صادق عليہ السلام اہل مدينہ کي واجبات کي ادائيگي کے امور ہميشہ اپني والدہ ماجدہ ام فروہ اور اپني شريک حيات جناب حميدہ کے سپرد کيا کرتے تھے-اس کے علاوہ جناب حميدہ حديث  بھي نقل کرتي تھيں، حضرت امام جعفر صادق کي اس مشہور و معروف حديث کي راوي بھي آپ ہي ہيں جو آپ نے دنيائے محن کو ترک کرنے سے کچھ لمحہ قبل ارشاد فرمائي تھيں کہ : "جو شخص نماز کو سبک سمجھےگا اسے ہماري شفاعت نصيب نہيں ہوگي -

تاريخ اسلام کي ايک اور عظيم و مثالي خاتون فاطمہ بنت عبداللہ بن ابراہيم ہيں، جو اپنے بيٹے داۆد کي وجہ سے ام داۆد کي کنيت سے مشہور ہيں، يہ وہي خاتون ہيں جن سے رجب المرجّب کي پندرہويں تاريخ کا عمل " عمل ام داود"  منسوب ہے- جناب ام داۆد حضرت امام جعفر صادق عليہ السلام کي رضاعي ماں ہيں- ساتويں صدي کے معروف عالم دين سيّد ابن طاۆس عليہ الرحمۃ فرماتے ہيں: ميري دادي ام داۆد ايک نيک و شائستہ اور مۆمنہ خاتون تھيں - ( جاري ہے )


متعلقہ تحریریں:

تاريخ کي ايک عظيم المثال خاتون جناب " تکتم " ( حصّہ دوّم )

مسلمان عورت کي عزّت