• صارفین کی تعداد :
  • 5603
  • 12/16/2013
  • تاريخ :

اسلامي کھيل کا فيڈريشن

اسلامی کھیل کا فیڈریشن

ايران ميں کھيل کي تاريخ (حصہ اول)

ايران ميں خواتين کا کھيل(حصہ دوم)

ايران کي کوششوں کي بدولت اسلامي کھيل کا فيڈريشن سنہ 1370 کو قائم کيا گيا-اسلامي کھيلوں کا مقابلہ ہر چار سال کے بعد ايران ميں منعقد کروايا جاتاہے اور اسلامي ممالک کي تمام خواتين کھلاڑي اس ميں بھرپور شموليت کرتي ہيں- اس کھيل کا پہلا دور سنہ 1371 کو تہران ميں منايا گياجس ميں 46 ٹيميں مختلف اسلامي ممالک سےآکر  شامل ہوگئيں-اس فيڈريشن کا نصب العين حسب ذيل تھا:

1- صلح کروانا  اور دوستي کو مضبوط  قائم رکھنا

2-خواتين کي کھيلوں کي تہذيب مختلف اسلامي ملکوں ميں پھيلانا

3- خواتين کے درميان سلامتي اور نشاط پيدا کرنا

4-عمومي اورپيشہ ورانہ کھيلوں کو معاشرے ميں عام کرنا

مسلمان کھلاڑيوں کے ليے مخصوص  وردي  اکثر اسلامي ممالک ميں خواتين کھلاڑيوں کا سب سے اہم مسئلہ رہاہے- اگرچہ اسلام ميں کھيلنے پر بہت زور ديا گياہے مگر لباس کي پابندي کے ساتھ- مذہبي اعتقادات کے مطابق مسلم خواتين   کو خاص کپڑے پہننے کي ضرورت پڑتي ہے مگر اکثر بين الاقوامي مقابلوں ميں ان کو اس کپڑوں سے روکا جاتاہے- اس ليے انقلاب کے بعد ايران ميں خواتين کھلاڑيوں کے ليے اسلامي رويايات کے  مطابق وردي بنائے گئے-  اگرچہ اس وقت ميں اس  کام کے بارے ميں سوچنا ناممکن تھا  مگر آج کل اس موضوع   پر زيادہ توجہ دي جارہي ہے  تاکہ خواتين کو  بين الاقوامي مقابلوں ميں حصہ لينے  ميں آساني رہے  -

فٹ بال

ايراني خواتين کي فٹ بال ٹيم 1970ء کو  تشکيل دي گي تھي-اس سے پہلے خواتين گول کيپر اور کبھي بطور عام کھلاڑي مردوں  کي مقامي ٹيموں ميں کھيلتي تھيں- جب ان کا شوق فٹ بال کھيلنے کے لئے بڑھنے لگا- تو ايران فٹ بال فيڈرشين  نے باصلاحيت خواتين کا انتخاب کرکے FIFA کے ٹريننگ کورس کے لئے بھيج ديے-ان کے تربيت ختم ہونے کے بعديہ خواتين کھلاڑي  ايران واپس آکے خواتين کي فٹ بال ٹيم کي ٹريننگ شروع کرنے لگيں-استقلال کلب(Club)ميں ايران کي پہلي خواتين فٹ بال ٹيم بنائي گئي تھي- انقلاب کے 13 سال تک ان ٹيموں کا کام روک ليا گيا تھا - مگران خواتين کا شوق بڑھتا ہي جارہا تھا- اس ليے 1371ش کو الزہرا يونيورسٹي ميں لڑکيوں کے لئےسالانہ فٹ بال کا پہلا دور شروع ہوگيا-کچھ عرصہ کے بعد خواتين کي پيشہ ور فٹ بال ٹيم بن گئي اور وہ اس قابل ہوگئي کہ بيرون ملک مقابلوں ميں حصہ لے سکتي-اس  ٹيم نے اپني پہلي بيرون ملک  مقابلہ  مغربي ايشيايي چيمپئن شپ  ميں حصہ ليا اور دوسري پوزيشن حاصل کي- يہ  ٹيم يہاں تک پہنچ کر رک نہيں گئي بلکہ آگے بڑھنے  کا راستہ ڈھونڈ ليا اور2007ء  کو ايشيا کپ(Asia Cup) کے ابتدائي دور ميں بھارت سے جيت کردوسرے دور تک پہنچ گيا- 1384ش ميں يہي ٹيم بغير کسي شہرہ کے اردن کے ايشيا کپ ميں حصہ لي اور  توقع سے زيادہ بہترين کھيل پيش کرکے دوسري پوزيشن حاصل کي -وہ اپنے خاص کپڑوں کي بنا پر سب ٹيموں سے الگ دکھائي ديتي تھے- اور اس کي تصويريں شائع ہوتي رہيں - آخري عالمي درجہ بندي  کے مطابق يہ ٹيم دنيا کے 55 ويں بہترين ٹيم قرار پائي-

جاري ہے-