• صارفین کی تعداد :
  • 719
  • 2/15/2012
  • تاريخ :

ضرب المِثل اشعار (13)

کتاب

*داورِ حشر مرا نامۂ اعمال نہ ديکھ

اس ميں کچھ پردہ نشينوں کے بھي نام آتے ہيں

شاعر: ڈاکٹر ايم ڈي تاثير

 *دِل کا اُجڑنا سہل سہي، بسنا سہل نہيں ظالم!

’بستي بسنا کھيل نہيں، بستے بستے بستي ہے‘

شاعر: فاني بدايوني

 *مشہور:

دل کے پھپولے جل اُٹھے سينے کے داغ سے

’اِس گھر کو آگ لگ گئي گھر کے چراغ سے‘

اصل:

شعلہ بھڑک اٹھا ميرے اس دل کے داغ سے

آخر کو آگ لگ گئي گھر کے چراغ سے

شاعر: پنڈت مہتاب رائے تاباں

 * دِل کے ٹُکڑوں کو بغل بيچ لئے پھرتا ہوں

’کچھ علاج اِس کا بھي اے چارہ گراں ہے کہ نہيں‘

شاعر: اختر شيراني

* ديکھ تو دِل کہ جاں سے اُٹھتا ہے

’يہ دھُواں سا کہاں سے اُٹھتا ہے‘

شاعر: مير تقي مير

بشکريہ : شاعري ڈاٹ کلان ٹيم  ڈاٹ کام

پيشکش : شعبۂ تحرير و پيشکش تبيان