• صارفین کی تعداد :
  • 2350
  • 10/19/2013
  • تاريخ :

سجدے کے ليے مناسب چيز

سجدے کے لیے مناسب چیز

كس چيز پر سجدہ كرنا چاہيے (حصّہ اول)

بہرحال مكتب اہلبيت(ع) كے پاس زمين پر سجدہ كے وجوب كے بارے ميں بہت سى ادلّہ ہيں من جملہ پيغمبر اكرم(ص) كى احاديث ، صحابہ كى سيرت جو آئندہ بحث ميں بيان ہوگى اور آئمہ اطہار سے نقل ہونے والى روايات كہ جنہيں ہم عنقريب نقل كريں گے-

ہميں تعجب يہ ہے كہ بعض اہلسنت برادران ہمارے اس فتوى كے مقابلے ميں كيوں اسقدر شديد ردّعمل كا مظاہرہ كرتے ہيںاور كبھى اسے بدعت سے تعبير كرتے ہيں حتى بعض اوقات اسے كفر اور بُت پرستى شمار كرتے ہيں-

اگر ہم خود ان كى اپنى كتابوں سے ثابت كرديں كہ رسولخدا(ص) اور انكے اصحاب، زمين پر سجدہ كرتے تھے تو كيا پھر بھى يہ عمل بدعت ہوگا؟

اگر ہم ثابت كرديں كہ آنحضرت(ص) كے بعض اصحاب جيسے جناب جابر ابن عبداللہ انصارى وغيرہ جب شديد گرمى كى وجہ سے پتھر اور ريت گرم ہوجاتى تھى تو وہ كچھ مقدار ريت كو ايك ہاتھ سے دوسرے ہاتھ ميں تبديل كرتے تھے تاكہ كچھ ٹھنڈى ہوجائے اور اس پر سجدہ كيا جا سكے''(1) تو كيا اس صورت ميں جناب جابر ابن عبداللہ كو بت پرست يا بدعت گزار شمار كريں گے؟

پس جو شخص حصير پر سجدہ كرتا ہے يا ترجيح ديتا ہے كہ مسجد الحرام يا مسجد نبوي(ص) كے فرش پر سجدہ كرے تو كيا وہ حصير كى پرستش كرتا ہے يا مسجد كے فرش كى پوجا كرتا ہے؟

كيا ضرورى نہيں ہے كہ يہ برادران اس موضوع پر مشتمل ہمارى ہزاروں فقہى كتابوں ميں سے كم از كم ايك كتاب كا مطالعہ كريں تا كہ انہيں پتہ چل جائے كہ ان ناروا نسبتوں ميں ذرّہ برابر بھى حقيقت كى جھلك نہيں ہے؟

آيا كسى پر بدعت يا كفر و بت پرستى كى تہمت لگنا،كم گناہ ہے اور قيامت كے دن اللہ تعالى اسے آسانى سے معاف كر ديگا؟

اس بات كو جاننے كے ليے كہ كيوں شيعہ زمين پر سجدہ كرتے ہيں، امام صادق - كى اس حديث كى طرف توجہ كافى ہے- ہشام بن حكم نے كہ جو امام كے خصوصى اصحاب ميں سے تھے سوال كيا، كہ كس چيز پر سجدہ كيا جا سكتا ہے اور كسى چيز پر سجدہ كرنا جائز نہيں ہے؟ امام (ع) نے جواب ميں فرمايا'' السجود لا يجوز الا على الارض او ما انبتت الارض الا ما أكل اَو لبس'' كسى چيز پر سجدہ كرنا جائز نہيں ہے مگر صرف زمين پر يا ان چيزوں پر جو زمين سے اگتى ہيں اور كھانے اور پہننے كے كام نہيں آتيں ہشام كہتا ہے ميں نے عرض كى آپ(ع) پر قربان ہوجاۆں اس كى حكمت كيا ہے ؟ ( جاري ہے)

 

 

متعلقہ تحریریں:

غير خدا كے ليے سجدہ كرنا جائز نہيں ہے

عبادات ميں سجدہ كى اہميت