• صارفین کی تعداد :
  • 4194
  • 6/22/2008
  • تاريخ :

حج کا واجب هونا حضرت علی (ع) کی نظر میں

 

خانه کعبه
 
 

قَالَ عَلِی (ع) ''فَرَضَ عَلَیْکُمْ حَجَّ بَیْتِہِ الْحَرَامِ الَّذِي جَعَلَہُ قِبْلَةً لِلْاٴَنْامِ “۔

حضرت علی (ع) نے فرمایا:

”خداوند عالم نے اپنے اس محترم گھر کے حج کو تم پر واجب قرار دیا ھے جسے اس نے لوگوں کا قبلہ بنایا ھے“ ۔

 

قال علی (ع) فَرَضَ حَجَّہُ وَاٴَوْجَبَ حَقَّہُ وَکَتَبَ عَلَیْکُمْ وِفَادَتَہُ فَقَالَ سُبْحَانَہُ <وَلِلّٰہِ عَلَی النَّاسِ حجُّ الْبَیْتِ مَنِ اسْتَطاٰعَ إِلَیْہِ سَبِیلاً وَمَنْ کَفَرَ فَإِنَّ اللّٰہَ غَنِیٌّ عَنِ الْعٰالَمِینَ

حضرت علی (ع) نے فرمایا :خدا وند عالم نے کعبہ کے حج کو واجب ،اس کے حق کی 

ادائیگی کو لاز م اور اس کی زیارت کو تم پر مقرر کیا ھے پس وہ فرماتا ھے: ” لوگوں پر خدا کا حق یہ ھے کہ جو بھی خدا کے گھر تک جانے کی استطاعت رکھتا ھے وہ بیت اللہ کی زیارت کے لئے جائے اور وہ شخص جو کفر اختیار کرتا ھے (یعنی حج انجام نھیں دیتا ) تو خدا عالمین سے بے نیاز ھے “۔

                                                              کتاب کا نام    : حج کی منتخب حدیثیں

 موٴلف:   سید علی قاضی عسکری

                                                               مترجم  : سید احتشام عباس زیدی     

                                                                پیشکش    : شعبہ تحریرو پیشکش تبیان


متعلقہ تحریریں:

 اول وقت میں نمازکی فضیلت

 زکوٰة نہ دینے کا بیان