• صارفین کی تعداد :
  • 3811
  • 12/17/2013
  • تاريخ :

انتظار مہدي اور مہدويت کے دعويدار 2

انتظار مہدی اور مہدویت کے دعویدار 2

انتظار مہدي اور مہدويت کے دعويدار 1 (حصّہ اول)

مدينہ کے فقہاء اور اشراف نے جعفر بن سليمان سے ابن عجلان کے لئے عفو و درگذر کي درخواست کي اور کہا: اے امير! محمد بن عجلان مدينہ کے فقيہ و عابد ہيں اور موضوع ان پر مشتبہ ہوا ہے اور انھوں نے گمان کيا ہے کہ گويا محمد بن عبداللہ مہدي موعود ہيں، جن کي بشارت احاديث ميں آئي ہے-

يہي مسئلہ مدينہ کے مشہور عالم و محدث عبداللہ بن جعفر کے لئے بھي پيش آيا اور انھوں نے مدينہ کے حاکم کي بازخواست کے جواب ميں کہا:

ميں نے محمد بن عبداللہ کا ساتھ ديا کيونکہ مجھے يقين تھا کہ وہ وہي مہدي موعود ہيں جن کي بشارت ہماري حديثوں ميں آئي ہے؛ وہ جب تک زندہ تھے مجھے اس سلسلے ميں کوئي شک نہ تھا اور جب وہ قتل ہوئے تو ميں سمجھ گيا کہ وہ مہدي نہيں ہيں، اور اس کے بعد کسي کے دھوکے ميں نہيں آۆں گا-

منصور کا نا بھي عبداللہ اور اس کے بيٹے کا نام محمد تھا چنانچہ اس نے اپنے بيٹے کو مہدي کا لقب ديا اور دعوي کيا کہ "مہدي موعود نفس زکيہ نہيں بلکہ ميرا بيٹا ہے"-

نيز بعض فرقے بعض سابقہ ائمہ (ع) کي مہدويت پر يقين رکھتے تھے؛ مثال کے طور پر فرقہ ناۆوسيہ کا خيال تھا کہ امام صادق (ع) مہدي اور زندہ ہيں اور غائب ہوئے ہيں-

فرقہ واقفيہ امام موسي کاظم (ع) کے بارے ميں يہي عقيدہ رکھتے تھے اور کہتے تھے کہ آپ (ع) زندہ رہيں گے حتي کہ دنيا کے مشرق و مغرب پر مسلط ہوجائيں اور زمين کو عدل و انصاف سے بھر ديں جس طرح کہ يہ ظلم و جور سے بھري ہوئي ہوگي اور آپ (ع) قائم المہدي ہيں- اور بالآخر بعض لوگوں نے امام حسن عسکري (ع) کي شہادت کے بعد آپ (ع) کي شہادت کا انکار کيا اور کہا کہ آپ (ع) ہي قائم المہدي ہيں-

يہ وہ نمونے ہيں جن سے ثابت ہوتا ہے کہ عقيدہ مہدويت رسول اللہ (ص) کے زمانے سے مسلمہ اسلامي عقيدہ تھا اور مسلمان ابتداء ہي سے منتظر تھے اس شخصيت کے جو ظلم کے خلاف جدوجہد کرے اور عدل و انصاف کا پرچم لہرائے-

ظاہر ہے کہ بعض بازيگروں نے تاريخ کے بعض حصوں ميں اگر اس اسلامي عقيدے سے ناجائز فائدہ اٹھايا ہے تو اس کا مطلب انکار مہدويت نہيں ہونا چاہئے کيونکہ بہت سوں نے الوہيت اور نبوت کے دعوے کئے ليکن ان کے دعوے خدا اور انبياء کے انکار کا جواز نہ بن سکے؛ جيسا کہ علم و دانش اور صنعت اور سائنس و ٹيکنالوجي سے بھي ہمارے زمانے ميں غلط فائدہ اٹھايا گيا ہے اور انہيں انسانيت کے خلاف استعمال کيا گيا ہے ليکن کسي نے بھي سائنس اور ٹيکنالوجي کي نفي روا نہيں رکھي ہے-