• صارفین کی تعداد :
  • 3004
  • 4/13/2013
  • تاريخ :

غبار خاطر

غبار خاطر

غبار خاطر

( ابوالکلام آزاد کے فرضي خطوط )

 مپرس تا چه نوشته است کلک قاصر ما                                 خط غبار من است اين غبار خاطر ما       

   ( مير عظمت بےخبر بلگرامي )

مولانا ابوالکلام آزاد بنيادي طور پر مفکر ہيں جيسا که انہوں نے خود  کسي جگه لکها ہے جوکچھ اسلاف چهوڑ گئے تهے وه انہوں نے ورثے ميں پايا اور اس کے حصول اور محفوظ رکهتے ميں انہوں نے کوتاہي نہيں کي اور جديد کي تلاش اور جستجو کے ليے انہوں نے اپني راه خود بنالي .

نتيجه يه ہوا که ان کي ذات علوم قديمه و جديده کا سنگم بن گئي .اس کا لازمي نتيجه يہي ہونا چاہيے تها که ان پر غور  و فکر کے دروازے کهل جاتے اور وه  ان راہوں  سے  ايک نئي دنيا ميں پہنچ جاتے اور يہي ہوا .

آزاد کي زندگي اور تعليم

مولانا ابوالکلام محي الدين احمد آزاد  ، مکه ميں (11 نوامبر   1888 ء) ميں  پيدا ہوئے ( حجاز) اور ( 22  فوريه  1958 ء) ميں دہلي نو  ميں ان کا انتقال ہوا  .ان کي والده ايک عرب خاندان کي چشم و چراغ تهيں . ان کي مادري زبان عربي تهي . گهر ميں والد سے گفتگو اردو ميں ہوئي تهي .( اردو کے غلط الفاظ اور غلط مخارج جو مکه ميں عرب بولتے ہيں ان کي زبان پر بهي رائج تهے ).

پهر  ان کے خاندان کلکته گئے اور اس پر تعليم سراسر عربي اور فارسي کي رہي.لکن بعد ميں مشق و محنت سے انهيں زبان پر پوري قدرت حاصل ہوگئيں ليکن ان کے تلفظ ميں کہيں کہيں غرابت اور قدامت کے اثرات آخر تک قائم رہے .

مولانا کي تعليم خالص  مشرقي انداز پر ہوئي ليکن جب انہوں نے انگريزي ميں کافي مہارت پيدا کرلي تو اس کے بعد انہوں نے مغربي علوم سے واقفيت حاصل کرنے کے ليے انگريزي کتابيں بهي کثرت سے پڑهيں .اس کا اثر ان کي طرز تحرير پر بهي نظر آتا ہے .

مولانا آزاد بهي لکهنو کے دوران  قيام ميں دارالعلوم  ميں مولانا شبلي کے ساتھ مقيم تهے .

تصانيف

پہلا تصنيف : ترجمان القرآن ، الہلال ، البلاغ و ... غبار خاطر


متعلقہ تحریریں:

طنز و مزاح کا دوسرا اور تيسرا دور