• صارفین کی تعداد :
  • 1713
  • 11/7/2012
  • تاريخ :

گلستان سعدي

گلستان سعدی

ايران کے قادر الکلام شاعر اور سحر طراز اديب شيخ شرف الدين کا نثري شاہکار ہے- فارسي نثر کي دوسري کتاب کو اس کے برابر مقبوليت ان ممالک ميں حاصل نہيں ہوئي- جہاں فارسي بولي يا سمجھي جاتي ہے- اس کي تقليد ميں لکھي گئيں ليکن کوئي کتاب اس کي عظمت کو نہيں پہنچ سکي- شيخ نے گلستان 656 ھ ميں تصنيف کي- گلستان کا موضوع اخلاقيات ہے- ليکن سعدي نے نصيحت کي کڑوي گولي ظرافت کے شہد ميں ملا کر پيش کي ہے اور اپنے مقصد کو چھوٹي بڑي حکايات کے ذريعے- خاطر نشان کرايا- يہ کتاب سيرت پادشاہان، اخلاق درويشان، فضيلت قناعت، فضيلت خاموشي، عشق و جواني، ضعف و پيري اور آداب صحبت کے عنوانات کے تحت آٹھ ابواب پر مشتمل ہے- تمہيد اور خاتمہ اس کے علاوہ ہے- گلستان، ابواب کے حسن ترتيب ميں اپنا جواب نہيں رکھتي- سيرت پادشاہان کے بعد اخلاق درويشان اور عشق و جواني کے بعد ضعف و پيري سے کتاب ميں ايک معنوي توازن قائم ہوگيا ہے بہت سي حکايات ميں سعدي نے اپني ذات کو داخل کرکے ان کي تاثير ميں اضافہ کرديا ہے- سعدي نے اس دور ميں انساني عظمت کا پرچم بلند کرديا ہے- جب حملہ مغول کے بعد انساني جان کي کوئي قدر و قيمت باقي نہيں رہ گئي تھي- شيخ نے اس دور جبر و استبداد کے جابر حکمرانوں کے سامنے کلمہ حق کہہ کر قلم کي آبرو رکھ لي- سعدي نے ظالم حاکموں اور ريا کار درويشوں دونوں معاف نہيں کيا- معلم اخلاق کي حيثيت سے سعدي کا درجہ بہت بلند ہے- اس کے باوجود ان کے بعض اخلاقي نظريات سے اختلاف بھي کيا جا سکتا ہے- سعدي نے گلستان کي نثر ميں جابجا شعر کے پيوند لگا کر نثر کي معنويت کو اجاگر کيا ہے- اس طرح يہ کتاب ايک معجز بيان نثر نگار اور جادو نگار شاعر کي نثر و نظم کا ايک دلکش امتزاج ہے- سعدي کا انداز بيان سادہ نہيں ہے گلستان کي نثر مقفي اور مسجع ہے- اس ميں صنائع و بدائع کا استعمال بھي ملتا ہے ليکن سعدي نے لفظوں کي خاطر معاني کا خون کبھي نہيں کيا- ان کے ہاں تلکف کي گرانباري محسوس نہيں ہوتي- چھوٹے چھوٹے جملے ريشم کے لچھوں کي طرح معلوم ہوتے ہيں- کہيں کہيں ان کا ايجاز اعجاز بن جاتا ہے- موزون متناسب اور ہم آہنگ الفاظ ان کي نثر کا حسن بڑھاتے ہيں-

بعض محققين نے گلستان کا شمار مقامات حميدي جيسي کتابوں ميں کيا ہے اور اسے بھي مقالہ نويسي ہي قرار ديا ہے- ليکن گلستان مقامات حميدي کي طرح خشک اور بے جان نہيں ہے-

پيشکش : شعبۂ تحرير و پيشکش تبيان


متعلقہ تحريريں:

خوش ذوق امرائے  عہد کي بدولت مثنوي کے  مطالعہ کا شوق اور بھي بڑھ جاتا ہے