• صارفین کی تعداد :
  • 2698
  • 9/25/2012
  • تاريخ :

محمدِ مصطفيٰ (ص)  کو ديکھو

محمدِ مصطفیٰ (ص)

محمدِ    مصطفيٰ (ص)     کو    ديکھو     

 محمدِ    مصطفيٰ (ص)     کو    ديکھو

وہ    اپنے    کردار   کي   زباني     

بتائے     قرآن    کے    معاني

اس   آئينے  ميں  خدا  کو  ديکھو     

محمدِ    مصطفيٰ (ص)     کو    ديکھو

سماعتوں     پر     يقين     کرنا     

دھوئيں  کے اندر ہے رنگ بھرنا

ابد کي آنکھيں بھي جس کو ديکھيں     

وہ    کُہسارِ    ازل    کا   جھرنا

جبينِ    خيرالبشر   سے   پھُوٹے     

 يقينِ   اہلِ   نظر   سے  پھُوٹے

فنا   کے   پتلو!   بقا  کو  ديکھو

محمدِ    مصطفيٰ (ص)     کو    ديکھو

ہزاروں   لوگ  ايسے  محترم  ہيں    

  جو   صاحبِ   خامہ  و  عَلم  ہيں

وہ  خاکِ  پا  بھي  نہيں  نبي کي     

وہ سب اکٹھے بھي اُس سے کم ہيں

بڑے  بڑوں  سے بھي وہ بڑا ہے     

افق  کے  منبر  پہ  وہ  کھڑا ہے

خطيبِ   ارض  و  سما  کو  ديکھو

محمدِ    مصطفيٰ (ص)     کو    ديکھو

وہ   دستِ   رحمت   دراز  رکھے     

نگاہِ      عالم      نواز     رکھے

گناہ    سے    اپنے   اُمتي   کو     

 وہ  خلوتوں  ميں  بھي  باز  رکھے

دريچۂ   روح   سے   وہ  جھانکے    

  کھُلے  ہيں در اُس پہ ہر مکاں کے

مکينِ    دار   الہدٰي   کو   ديکھو

محمدِ    مصطفيٰ (ص)     کو    ديکھو

ہر  ايک  سانس  اُس کي زندگي کا     

ہے    ايک    مينار   روشني   کا

جريدۂ    وقت    پر   رقم   ہے     

 ہر   ايک   لمحہ   ميرے  نبي  کا

اگر   کوئي   ذات   دائمي   ہے    

  تو  صرف  ميرے  حضور کي ہے

ہر  اک  صدي  کي صدا کو ديکھو

محمدِ    مصطفيٰ (ص)     کو    ديکھو

ہر   ايک   فرزندِ   ارضِ   خاکي     

 رہا  پناہوں  ميں  مصطفےٰ (ص)   کي

کوئي   کہيں  کا،  کوئي  کہيں  کا    

  نہ  کوئي  بد  دل،  نہ کوئي شاکي

جو    درسگاہِ    نبي   سے   نکلے     

 غلام   بھي   شاہ  بن  کے  نکلے

معلمِ     ارتقاء     کو     ديکھو

محمدِ    مصطفيٰ (ص)     کو    ديکھو

قدم  اُٹھائے  جہاں  پہ  رکھ  کر     

چراغ  سے  ہر  نشاں  پي رکھ کر

کھلائے  کَوڑي  کو  بھي  وہ حلوہ     

 خود  اپني  نوکِ  زباں پہ رکھ کر

زمانہ    لائے    نظير   اُس   کي     

 فلاحِ    انساں   فقير   اُس   کي

کمال   ہے  جس  ادا  کو  ديکھو

محمدِ   مصطفيٰ    (ص)    کو   ديکھو

مصنف: مظفر وارثي

شعبہ تحرير و پيشکش تبيان


متعلقہ تحريريں:

علم محمد ، عدل محمد، پيار محمد