• صارفین کی تعداد :
  • 1465
  • 3/19/2012
  • تاريخ :

خوبصورت انتخاب

محرم الحرام

عاشورا کے خوبصورت واقعات 1

بقلم: حجۃالاسلام سيد جواد حسيني

يزيد نے معاويہ بن ابي سفيان کي موت کے بعد ايک خط مدينہ کے والي وليد بن عتبہ کے لئے بھجوايا اور اس کو حکم ديا کہ حسين بن علي (ع) اور عبداللہ بن زبير کو بلواۆ اور ان سے ميرے لئے بيعت لو اور اگر انھوں نے انکار کيا تو ان کے سر قلم کرکے ميرے پاس دمشق روانہ کرو! اور مدينہ والوں سے بيعت لو اور اگر کسي نے انکار کيا تو ان کے ساتھ بھي وہي سلوک کرو- (2)

امام حسين (ع) نے مردانہ انداز سے فرمايا: "ہرگز يزيد کي بيعت نہيں کروں گا؛ ما کنت ابايع ليزيد" اور مروان کي دھمکيوں کے سامنے ڈٹ گئے اور اپنے اصحاب ميں سے 19 افراد کو بلوا کر اس کے اپني جگہ بٹھا ديا- (3)

بھائي محمد بن حنفيہ نے تجويز پيش کي کہ امام (ع) يمن چلے جائيں يا پھر پہاڑوں اور صحراğ کا رخ کريں تو آپ (ع) نے يہ تجويز مسترد کرتے ہوئے فرمايا: "يا اخي و اللّه لو لم يکن ملجأً ولا مأوي لما بايعت يزيدبن معاوية؛ ميرے بھائي! حتي اگر اس دنيا ميں ميرے لئے کوئي ايک پناہگاہ بھي نہ ہو پھر بھي ميں يزيد بن معاويہ کي بيعت نہيں کروں گا-

آخرکار آپ (ع) نے خواب ميں اپنے نانا رسول اللہ صلي اللہ عليہ و آلہ و سلم زيارت کي اور رسول اللہ (ص) نے فرمايا: "بيٹا حسين! خداوند متعال نے آپ کے لئے جنت ميں جس خاص مقام و منزلت کا تعين کيا ہے اس کا حصول شہادت کے بغير ممکن نہيں ہے"- (4) چنانچہ آپ (ع) رات کي تاريکي ميں والدہ ماجدہ فاطمہ بنت رسول اللہ (ص) کي زيارت کي اور مکہ جانے کا عزم فرمايا-

شعر

شب بود و سکوت مرگباري که مپرس

او بود و چشم اشکباري که مپرس 

مي رفت و صداي شيون مادر او 

مي گشت بلند از مزاري که مپرس(5) 

ترجمہ

رات تھي اور موت آفرين خاموشي ايسي کہ مت پوچھ

وہ تھے اور آنکھيں اشکبار ايسي کہ مت پوچھ

جارہے تھے اور ماں کي آہ و شيون

اٹھ رہي تھي ايک قبر سے ايسي کہ مت پوچھ

امام (ع) نے مدينہ سے مکہ کي طرف اور وہاں سے کوفہ اور کربلا کي طرف عزيمت کرکے تاريخ کے خوبصورت ترين انقلاب و انساني تحريک کي بنياد رکھي-

........

مآخذ:

2- تاريخ يعقوبي، ج 2، ص 241-

3- مناقب ابن شهرآشوب، ج 4، ص 88-

4- «و انّ لک في الجنّة درجاتٍ لاتنالها الّا بالشهادة» امالي شيخ صدوق تهران، انتشارات اسلاميّه- مجلس 30، حديث 1، عوامل بحراني، قم مۆسسة الامام المهدي(عج)، ج 17، ص 16-

5- محمد علي مجاهدي (پروانه)-

تحرير : ف ح مهدوي

پيشکش : شعبۂ تحرير و پيشکش تبيان