• صارفین کی تعداد :
  • 8379
  • 2/15/2012
  • تاريخ :

مريخ پر معدنيات کي موجودگي کا انکشاف

مریخ

امريکہ کے خلائي ادارے ناسا نے کہاہے کہ  مريخ کي تحقيق کے ليے بھيجي جانے والي اس کي روبوٹک گاڑي کے تجربات سے يہ انکشاف ہوا ہے کہ اس سيارے ميں ايسے معدني  ذخائر موجود ہيں  جن کي تشکيل ميں بظاہر پاني کا کردار رہا ہے-

مريخ کے نالي کي شکل کے جس حصے سے معدني اجزا ملے ہيں ، اسے ’ہوم اسٹيک ‘ کا نام ديا گياہے اور اس کي چوڑائي تقريباً انساني انگوٹھے کے مساوي ہے-

ناسا کاکہناہے کہ روبوٹک گاڑي  کے تجربات سے يہ اندازہ ہوتا ہے کہ يہ معدني جزو جپسم ہے-

جپسم  زمين پر بھي پايا جاتا ہےجسے عموماً  ڈرائي وال اور پلاسٹر آف پيرس بنانے ميں استعمال کيا جاتا ہے-

ناسا کے ماہرين کا قياس ہے کہ آتش فشاني چٹانوں سے بہہ کر آنے والے پاني نے جپسم کو نالي کي شکل ميں  جمع کرنے ميں کردار ادا کيا تھا-

ناسا نے اپنا تازہ ترين خلائي جہاز گذشتہ ماہ مريخ کي جانب روانہ کيا تھا- ’کيوراسٹي ‘ نامي يہ  جہاز اگلے سال کے وسط ميں وہاں پہنچے گا اور آتش فشانوں کے دہانوں کے اندر تجربات کرے گا-


متعلقہ تحريريں:

مستقبل ميں خلائي مخلوق سے ہمارے رابطے (حصّہ سوّم )