• صارفین کی تعداد :
  • 3753
  • 1/5/2012
  • تاريخ :

نيا سال

نیا سال

نکھر کيوں گيا آج سو رج کا نور

کوئي بات تو آج ہو گي ضرور

خوشي سي ہے چھائي ہو ئي دور دور

سماں ہے سہانا نئے سا ل کا

مبارک ہو آنا نئے سال کا!

زمانے نے کاٹے مصيبت کے دن

يہ راتيں خوشي کي يہ راحت کے دن

  مٹا رنج ، آئے مسرّت کے دن

يہ پيارا زمانہ نئے سال کا

مبارک ہو آنا نئے سال کا!

جو ہونا تھا پچھلے برس ہو چکا

کوئي ہنس چکا اور کوئي رو چکا

کو ئي پڑھ چکا اور کوئي سو چکا

سنا ۆ فسانہ نئے سال کا

مبارک ہو آنا نئے سال کا!

نئے سال کيا کر دکھا ۆ گے تم؟

 کہو کس طرح نا م پاۆ گے تم؟

 قدم آگے کيوں کر بڑھاۆ گے تم؟

کہ يہ ہے زمانہ نئے سال کا

مبارک ہو آنا نئے سال کا!

دل و جاں سے پڑھنے ميں محنت کرو!

ہر اپنے پرائے سے الفت کرو!

اِدھر يا اُدھر دھيان تم مت کرو!

يہي ہے ترانہ نئے سا ل کا !

مبارک ہو آنا نئے سال کا!

شاعر کا نام : اختر شيراني

پيشکش: شعبہ تحرير و پبشکش تبيان


متعلقہ تحريريں:

ہمارا وطن