• صارفین کی تعداد :
  • 495
  • 1/4/2012
  • تاريخ :

دور حاضر ميں  پيش آنے والي  تبديلياں (چوتھا حصّہ)

کتابیں

صديق عالم کي کہانيوں ميں بھي بنگال کو مرکزيت حاصل ہے اور وہ عموماً قصہ گو کي طرح قصہ سناتے ہيں- اپنے ملک کے شہروں کے ناموں کے باوجود فضا ميں اجنبيت ہے -”‌بسکٹ”‌ ان کي اچھي کہاني ہے- اطلاع ملتي ہے کہ ايک  بسکٹ ايجاد ہوا ہے جو بھوک پر قابو پا ليتا ہے- “فارسينيس”‌ کي فضا گندي، گھناوني ياد ہشت ناک کہي جا سکتي ہے- کيونکہ اس ميں تلذذ کي وجہ سے قراءت انگيزي ميں تو اضافہ ہو سکتا ہے مگر يہ Detachmentکي کہاني ہے- اس ميں بچہ داني کے توسط سے ليبر روم، زچگي کے آلہ اور ديگر طبّي اصطلاحات کے ذريعہ جس طرح انھوں نے قاري سے مکالمہ قائم کيا ہے وہ قابلَ تعريف ہے-بنگال کے ايک اور بزرگ افسانہ نگار انيس رفيع آج کي حسّيت کو فنکارانہ چابکدستي سے مظہر کرنے کي ماہرانہ قوت رکھتے ہيں-

“معزول”‌ ميں ووٹ بينک کي سياست کو محور بناتے ہوئے جمہوري نظام پر طنز کرتے ہيں تو “دستِ خير”‌ ميں تہہ دار استعاروں کے ذريعے آج کے بحران کو خوش اسلوبي سے اُجاگر کرتے ہيں- “خانہء تجلّي”‌ ماضي کي بازيافت ہے جہاں مرکزي کنٹرول روم (اميريکہ) آج کے تناظر ميں افسانہ ميں داخل ہوجاتا ہے- “ہائي وے”‌ميں پورے ملک کو مرکز سے جوڑنے سے مُراد رفتار کو بڑھانا ہے تاکہ مال و اسباب کو گھر گھر، گاوءں گاوءں، قصبہ قصبہ تک پہنچايا جا سکے- سواري اور زندگي دونوں کي رفتار کو مذکورہ افسانہ ميں علامتي طور پر پيش کيا گيا ہے- ترقي کي چمک دمک سے آنکھيں چکا چوند ہيں مگر پسِ پُشت وہ کربناک پہلو بھي ہے کہ نفع تو بہر حال بديسي کمپنيوں يا سرمايہ کاروں کو ہي پہنچ رہا ہے- کتنے پيڑ کٹے، جنگل ختم ہوئے، زرخيز زمين ہاتھوں سے پھسلي، اس کا کوئي حساب نہيں- “گدا گر سرائے”‌ ميں انيس رفيع نے ماضي کي حسّيت کو (ہندوستاني حسّيت) ساتويں صدي کے مشہور سياح ابن بطوطہ کے حوالے سے دريافت کرنے کي کوشش کي ہے-

ابن بطوطہ نے ستي کي کہنہ رواج يعني عورت کو جبراً ستي ہوتے ہوئے ديکھا تھا- انيس رفيع نے ابن بطوطہ کي زباني ہمارے نئے معاشرے ميں عورتوں کي مظلوميت کا قصہ سنايا ہے اور قصہ سنا نے کا عمل اکيسويں صدي کي اِ س پہلي دہائي ميں ہے جس سے بھائي عفّو گزرتا ہے- افسانہ کا يہ قصہ گو جب انفارميشن تکنالوجي کي بڑھتي ہوئي عالم کاري سے متصادم ہوتا ہے تو اُس دور کي مظلوم عورت آج اُسے چيختي ہوئي سنائي پڑتي ہے-

تحرير : پروفيسر صغير افراہيم

پيشکش : شعبۂ تحرير و پيشکش تبيان