• صارفین کی تعداد :
  • 2771
  • 8/21/2011
  • تاريخ :

جب امريکيوں  نے ايراني سرزمين پر قدم رکھا ( حصّہ دوّم )

امریکہ

مسيحيت کي تبليغ کے ليۓ مختلف طرح کے حربے آزماۓ گۓ - مدارس تعمير کيۓ گۓ ، لائبريريوں کا قيام عمل ميں لايا گيا ،  تحريري مواد کو چھاپنے کا انتظام کروايا گيا ، مريض خانے بناۓ گۓ اور اس کے ساتھ رفاہي اداروں کا قيام عمل ميں لايا گيا -

1830 ء ميں جو پہلے امريکي مذھبي تعليمات کي تبليغ کے سلسلے ميں ايراني سرزمين ميں داخل ہوۓ وہ " هريسون گري " ، " اوتيس دوايت " و " الي اسميت " تھے -

 امريکي مشنريوں نے بڑي چالاکي کے ساتھ اپنا کام کيا - انہيں حکومت وقت کي سرپرستي بھي حاصل تھي اور وہ ايرانيوں کے آداب و رسوم کا احترام بھي کرتے تھے ليکن ان سب چيزوں کے باوجود ايران ميں اسلامي اقدار کي حامل روايات غالب تھيں اور علماء دين نے بڑي فہم و فراست سے ان مشنريوں کا مقابلہ کيا -

ان مشنريوں نے ايک اخبار بھي نکالا جس کا اصل مقصد  مسيحي مذھب کي ترويج تھا -  عہد ناصري ميں اس اخبار نے اسلام کے خلاف توہين آميز مواد چھاپنا شروع کر ديا جس نے ناصرالدين شاہ کو مجبور کيا کہ وہ اس اخبار کو روک دے                               

2 جون سن 1893 ء ميں امريکي وزير نے حکومت ايران سے دوبارہ اس اخبار کو چھاپنے کي اجازت چاہي -  مختصر يہ کہ مختلف ادوار ميں ايران کے باسيوں کو مسيحيت کي طرف راغب کرنے کي کوشش کي جاتي رہي مگر يہاں کے رہنے والوں کے دلوں ميں اسلام کي محبت و احترام باقي رہا اور وہ عظيم مذھب اسلام کے ہي پيروکار رہے -

تحرير : سيد اسداللہ ارسلان


متعلقہ تحريريں:

ايران کے نباتات ( حصہ پنجم)

ايران کے نباتات ( حصہ چهارم)

ايران کے نباتات ( حصہ سوّم)

ايران کے نباتات ( حصہ دوّم)

ايران کے نباتات