• صارفین کی تعداد :
  • 2970
  • 8/19/2011
  • تاريخ :

قرآني معلومات (حصّہ دوّم)

قرآن مجید

• قرآن ميں سب سے زيادہ حضرت موسيٰ کا نام آيا ہے (136مرتبہ)

• قرآن ميں کل 26پيغمبروں کے نام ذکر ہوئے ہيں:( حضرت آدم ، ادريس، نوح ، ہود ، صالح ، لوط ، ابراہيم ، اسماعيل ، يعقوب ، اسحاق، يوسف،ايوب ، يونس ، شعيب، موسيٰ ، ہارون، داوود ، سليمان ، الياس ، اليسع، ذوالکفل، عزير ، زکريا ، يحييٰ عيسيٰ و ہمارے نبي حضرت محمد مصطفيٰ ( علي نبينا و آلہ و عليہم السلام اجمعين)

• رسول اکرم (ص) کا اسم مبارک قرآن ميں5 ، بار آيا ہے، 4 بار محمد (ص) اور ايک بار احمد(ص)

• قرآن ميں سب سے کم جناب يونس کا نام آيا ہے ”‌فقط دو بار”-

• سب سے زيادہ پيغمبروں کے نام سورہ ”‌انبياء” ميں آيا ہے 16، نبيوں کے نام ہيں”

• سب سے پہلے حضرت داؤد نے زرہ بنائي -

• سحر و جادو کا رواج جناب موسيٰ کے زمانہ ميں وجود ميں آيا-

• سب سے پہلے جناب سليمان عليہ السلام نے (بسم اللّٰہ الرّحمن الرّحيم ) لکھا-

• سب سے پہلے خدا وند عالم جناب ادريس کو علم نجوم ، حساب ، اور علم ہيات سکھايا-

• سب سے پہلے جناب ادريس نے کپڑا سلا اور خط لکھا-

• سب سے پہلے جو آيت حضرت رسول خدا (ص) پر نازل ہوئي وہ سورہ علق کي پہلي پانچ آئتيں تھيں-

• پہلي آيت جو حرمت شراب پر نازل ہوئي وہ سورہ بقرہ کي آيت نمبر 129ہے

• امام زمان عجل اللہ فرجہ ظہور کے بعد پہلي بار جس آيت کي تلاوت فرمائيں گے

وہ سورہ ہود کي آيت نمبر86 ہوگي”‌بَقِيَّتُ اللّٰہِ خَيْرٌلَکُمْ اِنْ کُنْتُمْ مُومِنينَ ”-

• اولين دعا جو قرآن ميں آيا ہے وہ سورہ بقرہ کي آيت 126 ہے -

• آخري سورہ جو پيغمبراکرم (ص) پر نازل ہوا وہ ”‌سورہ نصر ”ہے-

• آخري سورہ جو مدينہ ميں نازل ہوا وہ ”‌سورہ نصر ”ہے-

• آخري سورہ جو مکہ ميں نازل ہو اوہ ”‌سورہ روم ”ہے-

• قرآن ميں 114 بار لفظ ”‌رحيم ” آيا ہے-

• قرآن ميں  67 بار لفظ”‌صلوٰۃ” آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ ”‌آخرت”  115 بار آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ ”‌دنيا” 115  بار آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ”‌يوم  ” 365  بار بيان ہوا ہے-

• قرآن ميں لفظ”‌شھر”(مہينہ) 12بار آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ”‌رحمان” 57 بار آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ ”‌اللہ” تمام سوروں ميں آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ ”‌سورہ” 10بار استعمال ہوا ہے-

• قرآن ميں لفظ”‌قلم” 4 باراستعمال ہوا ہے-

• قرآن ميں لفظ ”‌جلالہ اللہ”  2707 بار آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ”‌امام” 12 مرتبہ آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ”‌حيات” 145  بار آيا ہے-

• قرآن ميں لفظ”‌موت” 145 بار آيا ہے-

بشکريہ رضويہ ريسرچ سينٹر


متعلقہ تحريريں:

علوم قرآن پر پہلي کتاب

عُلوم الِقُرآن

علوم قرآن سے کيا مراد ہے؟

اسامي قرآن کا تصور

قرآني معلومات