• صارفین کی تعداد :
  • 3275
  • 3/13/2011
  • تاريخ :

چاند تارا

چاند تارا

مشرق سے اِک تارا چمکا

ماتھے پر آکاش کے دمکا

ایسی اس نے جوت جگائی

تکتی رہ گئی ساری خُدائی

آنکھ نے اس سے نُور ہے پایا

دل کو اس سے چین ہے آیا

شیدا اس پر چاند ہُوا ہے

جُھک کر پیار سے دیکھ رہا ہے

 

کلام: غلام عباس


متعلقہ تحریریں:

کاش میں ہوتا تھانیدار

شمیم کی بلّی

بندر اور بندریا

منّے کی ماں

گپ شپ