• صارفین کی تعداد :
  • 3864
  • 10/18/2010
  • تاريخ :

ان حوادث سے انقلاب کمزور نہیں ہو سکتا

ایران کا پرچم

اگر چہ آج سانحہ ہفتم تیر کو کئی سال گذر چکے ہیں لیکن حقیقت یہ ہے کہ مختلف جہات سے اس واقعے کی یاد آج بھی تازہ ہے۔ اس مدت میں اس واقعے کی کچھ اور بھی جہتیں سامنے آئی ہیں۔ سب سے پہلے اس سانحے کی شخصیات بالخصوص ان میں سے بعض کی بات کرتے ہیں جو بلا شک وشبہ ایسی بڑی شخصیتیں تھیں کہ انقلاب کیلۓ جدوجہد اور تحریک کے دوران اور اس گھٹن کے زمانے اور اسلامی انقلاب کے بعد کی اس قلیل مدت میں کم نظیر تھیں۔ خاص طور پر ان میں شہید آیت اللہ بہشتی ( رضوان اللہ تعالی علیہ) تھے جو حقا و انصافا ایک عظیم اور نمایاں شخصیت اور ناقابل فراموش انسان تھے۔ عملی لحاظ سے بھی اور اخلاق و کردار اور فکر و نظر کے لحاظ سے بھی ان کی شخصیت سیاسی اور تنظیمی امور، کارہائے مملکت میں نمایاں اور بے مثال تھی۔ حق تو یہ ہے کہ ان کی شہادت ہمارے لۓ ایک بڑا نقصان تھا۔ البتہ یہ شہادت خود ان کیلۓ درجات اور مقام ومنزلت کی بلندی شمار ہوتی ہے جو کسی اور طریقے سے حاصل نہیں ہوسکتی تھی۔

ان کے علاوہ علماء تھے یا قدیمی انقلابی جو اس واقعے میں شہید ہوۓ یا وہ تعلیم یافتہ جوان اور روشن فکر افراد جو اس زمانے کے انقلابی ماحول اور جمہوری اسلامی پارٹی کے درخشاں ستارے تھے۔ ان سب کو مد نظر رکھتے ہوۓ بلا شبہ یہ ہمارے انقلاب کا ایک نایاب اور قیمتی مجموعہ تھا۔ لیکن وہ چیز جو ان سب سے اہم ہے وہ یہ ناقابل فراموش نکتہ ہے کہ اسلامی جمہوری حکومت کے یہ بڑے ستون گر گۓ لیکن یہ عمارت متزلزل نہیں ہوئی۔ یہ بہت ہی اہم بات ہے۔ ہم نے دیکھا ہے کہ کبھی کبھی کسی پارٹی ، کسی ملک یا کسی حکومت سے ایک رہنما جدا ہو جاتا ہے یا ہٹا دیا جاتا ہے تو اسی ایک شخص کا فقدان پورے سسٹم کو متزلزل کردیتا ہے لیکن آپ نے مشاہدہ فرمایا کہ بہتر اہم ترین افراد کا یکبارگی فقدان بھی ہمارے نظام کی کمزوری اور تزلزل کا موجب نہیں بنا بلکہ اس واقعے سے اس کی بنیادوں کو اور بھی مضبوطی ملی۔ یہ وہ اہم اور ناقابل فراموش نکتہ ہے جو واقعا اس الہی حکومت کا خاصہ ہے۔

البتہ اس میں شک نہیں ہے کہ ہمارے عظیم امام ( امام خمینی رحمۃ اللہ علیہ ) کا پر برکت اور پر فیض وجود جو ایک مضبوط پہاڑ کی طرح قائم تھا اس استقامت اور پائیداری کا سرچشمہ تھا۔ اس میں کوئی شک نہیں ہے لیکن حکومت اور امام ( امام خمینی رحمۃ اللہ علیہ) کا استحکام بذات خود ایک معجزہ ہے جس کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔

شہداء سانحہ ہفتم تیر کے اہل خانہ کے ساتھ ملاقات میں رہبر انقلاب اسلامی کا خطاب 1994-6-29

https://urdu.khamenei.ir

متعلقہ تحریریں:

سانحہ ہفتم تیر (اٹھائیس جون 1981 ) تاریخ انقلاب میں ناقابل فراموش واقعہ

دشمنوں کا ادھورا خواب

لوگوں کے ایمان، سانحہ ہفتم تیر کے وقت بھی اسلامی جمہوریہ ایران کے مستحکم رہنے کا راز

شہدائے سانحہ ہفتم تیر (اٹھائيس جون 1981) اسلامی جمہوریہ ایران کی اساس اور اسلامی اقدار کی حاکمیت کی راہ کے شہید ہیں

خرمشہر کا یوم آزادی

امام خمینی (رح): خرم شہر کو خدا نے آزاد کیا

اسلامی جمہوریہ ایران کی مسلح افواج کا دن

یوم اسلامی جمہوریۂ ایران

شورائے نگہبان یا نگراں کونسل

12 بہمن سنہ 1357 ہجری شمسی