• صارفین کی تعداد :
  • 10186
  • 4/29/2009
  • تاريخ :

پہیلیاں ( 111 تا 120 )

سوالیہ نشان

 

{111}

ديکھو يہ کيسا شيطان

ناک پہ بيٹھے پکڑے کان

{112}

سر ٹوٹے سل  بٹہ ٹوٹے

وہ چيز کبھي نہ ٹوٹے

{113}

کاغذ ميں ہ رہتا ہے

آگ لگے تو ہنستا ہے

{114}

پاني پي کر وہ لہرائے

بھوک لگےتو آگ بھي کھائے

جان اسکي اک بانس ميں ديکھي

گڑ گڑ اس کي سانس ميں ديکھي

{115}

سب سے جدا اس کي نشاني

اوپر آگ اور نيچے پاني

پينے والے شوق سے پئے

پي کر کھانسے اور پھر ئيے

{116}

رنگ برنگي ايک تھي مرغي

رنگ برنگے اس کے انڈے

چلنے لگي ٹھک ٹھک ٹھک

ہلنے لگے سب ہي انڈے

{117}

ايک ہے لال سي مانو بلي

جس کے گھر ميں بھي وہ جائے

لاکھوں من پاني پي جائے

اور سامان سب گھر کا کھائے

{118}

ايک تھال ہيروں سے بھرا

 سب کے سر پر اوندھا پڑا

موتي اس سے اک نہ گرے

آنکھ کھلے تو ہيرے غائب

{119}

پتھر کا ہے اک دربار

اوپر کھڑا ہے اک سردار

جو کچھ دربار کے اندر جائے

سفيد بن کر باہر آئے

{120}

سفيد کھيت اور کالے دانے

بوجھيں اس کو صرف سيانے

 

جوابات :

{111}

عينک

{112}

پرچھائيں

{113}

سگريٹ

{114}

حقہ

{115}

حقہ

{116}

بس ۔

 مسافر

{117}

آگ

{118}

آسمان۔

ستارے

{119}

چکي

{120}

کتاب

                                        شعبۂ تحریر و پیشکش تبیان


متعلقہ تحریریں:

پہیلیاں ( 71 تا 80 )

 پہیلیاں ( 61 تا 70 )