• صارفین کی تعداد :
  • 3576
  • 5/19/2012
  • تاريخ :

اشاعت اسلام کے مرکزي ايشيا پر اثرات ( چهٹواں حصّہ)

بسم الله الرحمن الرحيم

سوديت يونين کے مسلمانوں کا اپني تہذيب اور اپنے کلچر سے جدا ہونے اور مذہبي جماعتوں سے قطع رابطہ کے ساتھ ان کي زبان کے الف باء بھي 1928ء ميں عربي سے ”‌لاتيني“ زبان ميں اور اُس کے بعد 1940ء ميں ”‌سريليک“ زبان ميں تبديل ہوگئے شادي بياہ کي مذہبي رسميں بے اعتبار اور معيوب سمجھي جانے لگيں، ہر اسلامي عمل کے معيار اور اقدار جيسے روزہ، نماز، حج اور ختنہ کے اوپر سواليہ نشان لگايا جانے لگا-

اسٹالين کے مرنے کے بعد خروش چوف نے اسلام کے خلاف ايک دوسري مہم کا آغاز کيا اور وہ يہ کہ اُس نے اسلام کو مارکيسزم اور لينيزم کي آئيڈيولوجي کے برعکس خطرناک دشمن قرار ديا ليکن اس کي يہ حرکت اسٹالين کےنظريہ يعني مذہب کے مقابلملائم رويہ اور لينين کے قوانين سے انحراف کے سبب شديد محکوميت کي شکار ہوئي-

اس کے زمانہ حکومت ميں سوويت يونين کي تاريخ ميں سب سے خطرناک اسلام مخالف يہ ہي تحريک تھي(43) 1960ء کي دہائي کے اوائل ميں مرکزي ايشيا کے تاشقند شہر کي يونيورسٹي ميں منکران خدا کي ايک جماعت کي تاسيس ہوئي-

سوويت يونين کے مختلف مسلمان نشين جمہوري ممالک ميں 1960ء کے بعد اسلام مخالف اسناد جيسے فيلم، ڈرامے تصاوير وغيرہ دکھانے کي مہم شروع کي گئي، ضدّ دين اور ضدّمذہب کے مرکزي ايشيا کے مختلف شہروں عجائب گھربنائے گئے-