• صارفین کی تعداد :
  • 4083
  • 11/28/2011
  • تاريخ :

ديا

مسکراہٹ

بالا تھا جب سب کو بھايا بڑھا* ہوا کچھ کام نہ آيا

خسرو کہہ ديا* اس کا ناۆ ں ارتھ کرو نہيں چھاڈو گاۆ ں

 

* بڑھا جب بوليں گے تو بڑا سنائي دے گا -

* ديا يعني چراغ ہي اس پہيلي کا جواب ہے -

 

جواب: ديا يعني چراغ

 

شاعر کا نام: امير خسرو دہلوي

پيشکش : شعبۂ تحرير و پيشکش تبيان


متعلقہ تحريريں:

ناخون يعني ناخن