• صارفین کی تعداد :
  • 4349
  • 2/9/2011
  • تاريخ :

ذیابطیس  کے مرض میں ورزش کے فوائد

ذیابطیس

ذیابطیس کی بیماری کے ماہر ڈاکٹر مریضوں کو ہمیشہ ورزش کرنے کا مشورہ دیتے ہیں  تاکہ  شوگر کو کنٹرول کیا جا سکے ۔  تندرست افراد بھی اگر باقاعدگی سے ورزش کرتے رہیں تو ذیابطیس کے مرض میں مبتلا ہونے سے بچ سکتے ہیں ۔  اب ہم دیکھیں گے کہ جسمانی ورزش  ذیابطیس کے مریضوں کے لیۓ کیسے مفید ہوتی ہے ؟

٭  جسمانی فعالیت شوگر اور  بلڈپریشر کو کم کرتی ہے ۔

٭ جسم میں موجود کلسٹرول کو کم کرنے کے ساتھ  مفید کلسٹرول کو زیادہ کرتی ہے ۔

٭    جسم کی انسولین استعال کرنے کی صلاحیت میں معاون ثابت ہوتی ہے ۔

٭   دل کا دورہ پڑنےکے  خطرے کو کم کرتی ہے ۔

٭  دل  اور ہڈیوں کو مضبوط کرتی ہے ۔

٭  جوڑوں میں پائی جانے والی لچک کو برقرار رکھتی ہے ۔

٭  ڈپریشن اور پریشانی کے اثرات  کم کرتی ہے ۔

٭ وزن کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتی ہے ۔

٭  جسم  میں  موجود فالتو  چربی کو کم کرتی ہے ۔

٭  فرد کو توانائی اور طاقت بخشتی ہے جو روز مرہ کے کام کاج کے لیۓ بےحد ضروری ہے ۔

ورزش انسان کو ذیابطیس 2 میں مبتلا ہونے سے محفوظ رکھتی ہے ۔ یہ دیکھا گیا ہے کہ 90 فیصد  ذیابطیس کے مریض موٹے ہوتے ہیں اس لیۓ  اگر وزن کو 5 سے 7 فیصد تک کم کر دیا جاۓ تو یہ ذیابطیس سے محفوظ  رہنے میں بےحد معاون ثابت ہوتا ہے ۔  جو افراد معقول ورزش کے ساتھ  کھانے پینے کے معاملے میں بھی احتیاط سے کام لیتے ہیں وہ بالاخر  اپنا وزن کم کرنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں ۔ 

( جاری ہے )

تحریر : سید اسداللہ ارسلان


متعلقہ تحریریں :

ناک، ہونٹوں اور زبان میں سوراخ کرنے سے لاحق ہونے والے خطرات (حصہ دوّم )

امیر ممالک میں موٹاپے کی وجہ مالی پریشانی

سردیوں میں آنکھوں کی خشکی

ایشیائی نژاد افراد میں ذیابیطس زیادہ

ہارمونز کی تبدیلی سے چھاتی کے سرطان سے بچائو ممکن